Tasawwuf Advertisement 2024

قومی خبریں

خواتین

جونپور کی تاریخی اٹالہ مسجد کے مندر ہونے کا دعویٰ

کیس کی سماعت کیلئے 22 مئی کی تاریخ مقرر

لکھنو:جونپور کی ایک اور تاریخی اور شاہی اٹالہ مسجد پر بھی ہندو فریق نے مندر ہونے کا دعویٰ کیا ہے اور اس سلسلے میں کورٹ میں عرضی دائر کی ہے۔اترپردیش کے تاریخی شہر جونپور کی شاہی اٹالہ مسجد پر اب دعویٰ کیا گیا ہے کہ یہ ایک مندر ہے۔ جونپور شرقی سلاطین کے عہد کی تاریخی اٹالا مسجد کو اٹالا ماتا کا مندر قرار دینے کی سازش کی جارہی ہے۔ محکمہ آثار قدیمہ کے ڈائریکٹر کی رپورٹ اور کچھ کتابوں کا حوالہ دیتے ہوئے شاہی مسجد کو مندر ہونے دعویٰ کیا جارہا ہے۔تفصیلات کے مطابق سول جج سینئر ڈیویژن کورٹ میں وکیل اجے پرتاپ سنگھ نے اٹالا مسجد کو اٹالا ماتا مندر ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے اتر پردیش سنی سنٹرل وقف بورڈ اور مینجمنٹ کمیٹی اٹالا مسجد کے خلاف عرضی دی ہے جس کے بعد عدالت نے معاملہ کو سماعت کیلئے قبول کرلیا اور اس کیس کی سماعت کیلئے 22 مئی کی تاریخ مقرر کی۔ایڈوکیٹ اجے پرتاپ سنگھ نے کہا کہ اٹالا ماتا مندر کو قنوج کے بادشاہ جے چندر راٹھور نے بنوایا تھا۔ انہوں نے بھی دعویٰ کیا کہ آرکیالوجیکل سروے آف انڈیا کے پہلے ڈائریکٹر نے اپنی رپورٹ میں لکھا ہے کہ اٹالا ماتا مندر کو گرانے کا حکم فیروز شاہ نے دیا تھا لیکن مخالفت کی وجہ سے مندر نہیں گرایا جا سکا۔ بعد میں ابراہیم شاہ نے مندر پر قبضہ کر لیا اور اسے مسجد کے طور پر استعمال کرنا شروع کر دیا تھا۔واضح رہے کہ جونپور کی شاہی اٹالہ مسجد کو ہندوستان کی شاندار تاریخی مسجدوں میں شمار کیا جاتا ہے۔

No Comments:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *