Tasawwuf Advertisement 2024

قومی خبریں

خواتین

نوٹا کو سب سے زیادہ ووٹ ملنے پر انتخاب رد کرنے کا مطالبہ

مفاد عامہ کی عرضی پرسپریم کورٹ کی جانب سے الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری

نئی دہلی :سپریم کورٹ نے جمعہ کے روز اس مفاد عامہ عرضی پر الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کیا ہے جس میں الیکشن کمیشن کو یہ ہدایت دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے کہ ’نوٹا‘یعنی ’ان میں سے کوئی نہیں‘ کو سب سے زیادہ ووٹ ملنے پر انتخاب رد کیا جائے۔ اس عرضی میں یہ بھی مطالبہ کیا گیا ہے کہ اگر کسی سیٹ پر اس طرح کی حالت پیدا ہوتی ہے تو انتخابی حلقہ میں ہوئے انتخاب کو رد کر وہاں نئے سرے سے انتخاب کرائے جائیں۔اس معاملے کی سماعت کے لیے چیف جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ کی قیادت والی تین ججوں کی بنچ کے سامنے عرضی دہندہ شیو کھیڑا کی طرف سے سینئر ایڈووکیٹ گوپال شنکر نارائن پیش ہوئے۔ اس دوران انھوں نے عدالت سے کہا کہ سورت (گجرات) میں ہم نے دیکھا کہ وہاں ایک ہی امیدوار تھا اور ایسے میں اسے فاتح قرار دے دیا گیا۔ اگر ’نوٹا‘ کو بھی ایک امیدوار قرار دیا جاتا تو ایسا نہیں ہوتا۔
اس سماعت کے دوران چیف جسٹس آف انڈیا نے کہا کہ عدالت اس سلسلے میں نوٹس جاری کرے گی، کیونکہ یہ معاملہ انتخابی عمل سے جڑا ہے۔ عرضی دہندہ کے ذریعہ پیش وکیل کی دلیلوں کو سننے کے بعد الیکشن کمیشن کو اس معاملے میں جواب دینے کے لیے نوٹس جاری کر دیا گیا ہے۔

No Comments:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *