Tasawwuf Advertisement 2024

قومی خبریں

خواتین

اپوزیشن آئین میں تبدیلی کو لیکر جھوٹا بھرم پیدا کر رہی ہے: سید زین العابدین علی خان

اجمیر 20اپریل (میرا وطن نیوز)
سید زین العابدین علی خان روحانی سربراہ اور اجمیر شریف درگاہ کے دیوان نے ہفتہ کو کہا کہ بی جے پی کے ذریعہ آئین میں تبدیلی کرنا چاہتے ہے جو کہ اپوزیشن جماعتوں کے ذریعہ پھیلایاگیا ایک جھوٹا بھرم ہے، اور ترمیم کرنا الگ بات ہے۔
سید زین العابدین علی خان نے مزید کہا کہ آئین 1950 میں بنایا گیا تھا تب سے اب تک پارلیمنٹ میں کتنی ترامیم ہوئیں؟ قوم اور عوام کے مفاد میں اگر ترامیم کی ضرورت پڑی تو کی جائے گی۔ یہ صرف ایک جھوٹا وہم پیدا کیا جا رہا ہے۔ کیا 1975 میں اندرا گاندھی کی طرف سے لگائی گئی ایمرجنسی کوئی ترمیم نہیں تھی؟ انہوں نے کہا کہ ترامیم کو پابندی کو تبدیل کرنے سے نہیں جوڑا جا سکتا۔
مزید برآں بھارتیہ جنتا پارٹی کی قیادت والی مرکزی حکومت کی تعریف کرتے ہوئے سید زین العابدین نے کہا کہ ملک گزشتہ 10 سالوں میں مزیدترقی کی جانب گامزن ہے اور موجودہ حکومت کے تعاون سے ملک نے دنیا میں جو مقام حاصل کیا ہے وہ قابل تعریف ہے۔
عوام کو یہ بھی دیکھنا چاہیے کہ ہمارے ملک کو ترقی کی طرف کون لے جا رہا ہے اور پھر اجمیر شریف درگاہ سید نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔
یہ پوچھے جانے پر کہ کیا انتخابات میں رام مندر ایک مسئلہ ہوگا، سید زین العابدین نے کہا کہ رام مندر ایک مسئلہ ہوسکتا ہے لیکن اسے الیکشن سے نہیں جوڑا جاسکتا۔
سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ہی رام مندر کی تعمیر ہوئی۔ اس میں کریڈٹ لینے کا کوئی فائدہ نہیں عوام اس بات کو سمجھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب سپریم کورٹ اپنا فیصلہ دے چکی ہے تو اس پر تکلیف اٹھانے کا کوئی فائدہ نہیں۔
شہریت ترمیمی قانون پر بھی بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب ہمارا ملک دو حصوں میں تقسیم ہوا تو لوگ دنیا کے مختلف مقامات پر جا کر آباد ہوئے۔

No Comments:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *