Tasawwuf Advertisement 2024

قومی خبریں

خواتین

اجمل عورتوں کو بچے پیدا کرنے والی مشین سمجھتے ہیں۔وزیر اعلیٰ آسام

اے ائی یو ڈی ایف سربراہ اور لوک سبھا ایم پی پربسواس سرماکا سخت لفظی حملہ

گوہاٹی۔ کل ہند یونائٹیڈ ڈیموکرٹیک فرنٹ(اے ائی یو ڈی ایف) کے سربراہ اور لوک سبھا ایم پی بدرالدین اجمل پر سخت لفظی حملہ کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ آسام ہیمانتا بسواس نے کہاکہ ”عورات کا احترام کرنے سے“ وہ قاصر ہیں۔ناگاؤں میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سرما نے کہاکہ ”اجمل کے پاس عورتوں کا احترام نہیں ہے۔ وہ عورتوں کو بچے پیدا کرنے والی مشین ہی سمجھتے ہیں۔ اے ائی یو ڈی ایف لیڈر کی خواہش انہیں برقعہ کے اندر ہی رکھنے کی ہے۔اب اجمل کو سرمنتا سنکر دیو سنگھا کے پروگرام میں مدعو کیاگیا تو میں رات بھر سو نہیں سکا۔ وہ سنکر دیوا کے اصولوں کو نہیں مانتے ہیں اور میں سنگھا کے لوگوں کو یقین دلاتاہوں کہ جب تک بی جے پی حکومت آسام میں اقتدار میں ہے‘ آپ کو فنڈنگ کے لئے فکر مند نہیں ہونا ہے۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ مستقبل میں اجمل کو سرمنتا سنکر دیوا سنگھا کے تقریب میں مدعو نہیں کیاجاناچاہئے۔
اجمل نے اس سے قبل یہ کہتے ہوئے تنازعہ کھڑا کردیاتھا کہ مسلمان مرد قانون کے مطابق 21سال کی عمر ہوتے ہی شادی کرلیتے ہیں وہیں ہندو 40سال کی عمر تک غیرشدہ رہتے ہیں تاکہ کم ازکم تین عورتوں کے ساتھ غیر قانونی تعلقات بناسکیں۔انہوں نے مزیدکہاکہ اسی وجہہ سے ہندوؤں کے پاس آج کم بچے ہیں۔ اجمل نے مزیدکہاکہ ”ہندوؤں کی شادی 40سال کی عمر کے بعد ہوتی ہے۔انہیں کیسے بچے ہوں گے جبکہ وہ شادی تاخیر سے کرتے ہیں؟آپ کی زمین زرعی ہی رہے گی تب ہی بہتر نتائچ کی آپ توقع کرسکتے ہیں۔انہوں نے ہندوؤں کو مشورہ دیاکہ وہ مسلمان جیسا کرتے ہیں اسی فارمولہ پر عمل کریں۔ مذکورہ اے ائی یو ڈی یف لیڈر نے کہاکہ اگر ہندو لڑکیوں کی شادی 18-20سال کی عمر میں ہوتی ہے تو ان کے اچھی تعددا میں بچے ہوں گے۔

No Comments:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *