Tasawwuf Advertisement 2024

قومی خبریں

خواتین

اسکولوں کو بم سے اڑانے کی دھمکی والا ای میل ’روسی ڈومین‘ سے بھیجا گیاتھا

ملزم نے اپنی شناخت چھپانے کے لیے غالباً ورچوئل پرائیویٹ نیٹ ورک کا استعمال کیا ہوگا۔دہلی پولیس

نئی دہلی: راجدھانی دہلی اور اس سے ملحقہ نوئیڈا کے اسکولوں میں بدھ کی صبح ایک ای میل بھیجا گیا، جس میں انہیں بم سے اڑانے کی دھمکی دی گئی۔ دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ مجموعی طور پر 250 سے زیادہ اسکولوں کو فرضی دھمکیاں بھیجنے کے لئے جس ای میل آئی ڈی کا استعمال کیا گیا اس کا ڈومین ڈاٹ آر یو ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اسی ای میل سے گزشتہ سال بھی شہر کے ایک اسکول کو دھمکی آمیز ای میل بھیجا گیا تھا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق تفتیش میں شامل دہلی پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ملزم نے اپنی شناخت چھپانے کے لیے غالباً ورچوئل پرائیویٹ نیٹ ورک (وی پی این) کا استعمال کیا ہوگا۔ پولیس حکام نے کہا کہ ایسے حالات میں لوگوں پر نظر رکھنا مشکل ہو سکتا ہے۔ دہلی پولیس کے حکام نے یہ بھی کہا کہ انہیں اس سب کے پیچھے کسی سنگین سازش کا شبہ ہے!
اس معاملے میں دہلی پولیس نے تعزیرات ہند (آئی پی سی) اور انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی) ایکٹ کے تحت مجرمانہ سازش، گمنام مواصلات اور دیگر الزامات پر مقدمہ درج کیا ہے۔ وہیں، دہلی پولیس حکام کا کہنا ہے کہ یقینی طور پر اس طرح کا ای میل آئی ڈی ایڈریس کوئی بھی، کسی بھی جگہ سے بنا سکتا ہے۔ فی الحال دہلی پولیس نے اس معاملے میں اپنی جانچ شروع کر دی ہے۔تحقیقات میں شامل دہلی پولیس افسر کا کہنا ہے کہ یہ دھمکی روس میں قائم ڈومین آئی ڈی ‘سے بھیجی گئی تھی لیکن ممکن ہے کہ صارف نے اپنا آئی پی (انٹرنیٹ پروٹوکول) برقرار رکھنے کے لیے آئی ڈی کی ایک سریریز سے ای میلز کا ایک سلسلہ باؤنس کرا دیا ہو، جس میں ایڈریس چھپا ہوا ہو۔ اس بات کا امکان ہے کہ آئی پی ایڈریس کسی وی پی این کے ساتھ منسلک ہوں۔افسر نے کہا کہ ہم انٹرپول کے ڈیمی آفیشل (ڈی او) کو خط بھیج کر مدد طلب کریں گے، جس میں ای میل ایڈریس کے لیے سائن اپ کرنے والے شخص کی تفصیلات مانگی جائیں گی۔ اس معاملے میں دہلی پولیس افسر کا کہنا ہے کہ ہم ای میل بھیجنے والے رجسٹرڈ صارف کی تفصیلات جاننے میں مدد کے لیے روسی کمپنی سے بھی رابطہ کریں گے۔
خیال رہے کہ میل ڈاٹ آر یو ای میل سروس ہے جو روسی کمپنی ’وی کے‘ کی طرف سے فراہم کی جاتی ہے۔ یہ اسی طرح کی سروس ہے جس طرح جی میل کے نام سے گوگل اور آؤٹ لک کے نام سے مائیکروسافٹ فراہم کرتی ہے۔ جی میل اور آؤٹ لک کی طرح، دنیا میں کہیں بھی کوئی بھی شخص میل ڈاٹ آر یو پر بھی اکاؤنٹ بنا سکتا ہے اور اسے ای میل بھیجنے اور وصول کرنے کے لیے استعمال کر سکتا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ’ڈاٹ آر یو‘ ڈومین ہونے ہرگز یہ مطلب نہیں کہ ای میل صرف روس سے ہی بھیجا گیا ہے۔

No Comments:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *