Tasawwuf Advertisement 2024

قومی خبریں

خواتین

اوڈیشہ میں کانگریس کو جھٹکا، پوری کی امیدوار سچریتا موہنتی نے الیکشن لڑنے سے کیا انکار

سچریتا موہنتی نے مہم کے لیے فنڈ کی کمی کی وجہ بتائی

نئی دہلی

کانگریس کے ایک اور امیدوار نے الیکشن لڑنے سے انکار کر دیا ہے۔ دراصل، اڈیشہ کی پوری لوک سبھا سیٹ سے کانگریس کی امیدوار، سچریتا موہنتی نے مالی وجوہات کا حوالہ دیتے ہوئے اپنا نام واپس لے لیا ہے۔ اس سے قبل اندور سے کانگریس کے امیدوار نے بھی نامزدگی کے بعد اپنا نام واپس لے لیا تھا۔ سورت لوک سبھا سیٹ کے لیے کانگریس امیدوار کی نامزدگی منسوخ کر دی گئی۔

سچریتا موہنتی نے ہفتہ کو کانگریس پارٹی کا ٹکٹ واپس کر دیا اور دعویٰ کیا کہ انہیں پارٹی نے الیکشن لڑنے کے لیے کوئی رقم نہیں دی ہے۔ سچریتا موہنتی نے کانگریس جنرل سکریٹری کے سی وینوگوپال کو ایک ای میل بھیجا ہے، جس میں انہوں نے لکھا ہے کہ وہ ایم پی کا ٹکٹ واپس کر رہی ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سچریتا موہنتی نے لکھا کہ پوری لوک سبھا سیٹ پر ہماری انتخابی مہم بری طرح متاثر ہوئی ہے کیونکہ پارٹی نے مجھے انتخابات کے لیے فنڈنگ ​​دینے سے انکار کر دیا تھا۔ اوڈیشہ کانگریس کے انچارج ڈاکٹر اجوئے کمار نے مجھ سے انتخابی مہم کے اخراجات خود برداشت کرنے کو کہا۔

سچریتا موہنتی نے لکھا کہ وہ ایک ورکنگ جرنلسٹ تھیں، جو صرف 10 سال پہلے سیاست میں سرگرم ہوئیں۔ میں نے اپنی پوری طاقت انتخابی مہم میں لگا دی اور انتخابی مہم کے لیے لوگوں سے چندہ لینے کی کوشش بھی کی، لیکن اس میں بھی کامیابی نہیں ہوئی۔ میں نے پارٹی کی مرکزی قیادت سے بھی اپیل کی کہ وہ پارٹی فنڈ سے ضروری فنڈنگ ​​کریں تاکہ پوری لوک سبھا سیٹ پر موثر انتخابی مہم چلائی جاسکے۔ موہنتی نے لکھا کہ صرف فنڈز کی کمی ہمیں پوری لوک سبھا سیٹ جیتنے سے روک سکتی ہے کیونکہ میں خود انتخابی مہم جاری رکھنے کے قابل نہیں ہوں۔ پارٹی ٹکٹ واپس کرتے ہوئے موہنتی نے کہا کہ وہ کانگریس کی خاتون ہیں اور کانگریس کی اقدار ان کے ڈی این اے میں ہیں۔ موہنتی نے لکھا کہ ‘میں مستقبل میں بھی کانگریس کا سپاہی رہوں گا۔’

کانگریس کا ٹکٹ واپس کرنے پر سچریتا موہنتی نے کہا، ‘میں نے پارٹی ٹکٹ اس لیے واپس کیا کیونکہ پارٹی مجھے فنڈز دینے کے قابل نہیں ہے۔ دوسری وجہ یہ ہے کہ پوری لوک سبھا کی 7 اسمبلی سیٹوں پر جیتنے والے امیدواروں کو ٹکٹ نہیں دیا گیا ہے۔ کچھ کمزور امیدواروں کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔ ایسے میں میں یہ الیکشن نہیں لڑ سکتا۔

No Comments:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *